خیبر پختونخوا حکومت نے بلدیاتی انتخابات کا اعلان کر دیا


پشاور: (مخلص آخبار تازہ ترین)  وزیر اعلی خیبر پختونخوا محمود خان نے 15 ستمبر کو صوبے میں بلدیاتی انتخابات کا اعلان کیا ہے ۔ یہ فیصلہ بدھ کو منعقدہ کابینہ کے اجلاس میں کیا گیا جس کی صدارت وزیراعلیٰ نے کی۔  اس اجلاس میں صوبائی تمام وزراء ،خصوصی معاونین، مشیران، چیف سیکرٹری اور انتظامی سکریٹریوں نے شرکت کی۔  وزیراعلیٰ نے صوبے کے چیف خطیب اور موئن قاضیوں کے وظیفہ میں اضافے کی ہدایت کی۔

کابینہ نے پروبیشن اینڈ پیرول ایکٹ -2020 کو باضابطہ طور پر منظوری دے دی تاکہ بدکاریوں میں قید افراد کی مشروط رہائی اور پیرول پر رہائی کے بعد آسانی کی جاسکے۔ کابینہ نے صوبے میں آبی وسائل کے موثر انتظام کے لئے واٹر کمیشن اور واٹر ریگولیٹری اتھارٹی کے قیام پر اتفاق کیا ۔ صوبائی کابینہ نے صوبے بھر میں سرکاری شعبہ کے پرائمری ، مڈل ، ہائی اور ہائی اسکولوں میں ڈبل شفٹ شروع کرنے پر اتفاق کیا اور اس کے لئے میکانزم کی منظوری دے دی۔

خیبر پختونخوا میں حال ہی میں بلدیاتی انتخابات کا اعلان
کے پی نے سینیٹ کے آئندہ انتخابات میں اوپن بیلٹ سے متعلق صدارتی ریفرنس کی حمایت کی

موجودہ اساتذہ کی خدمات حاصل کی جائیں گی اور یہاں تک کہ منڈی سے اساتذہ بھی مقررہ تنخواہ پر بھرتی کیے جائیں گے۔ ڈبل شفٹ منصوبہ مالی سال 2021-22 تک نافذ کیا جائے گا ۔ کابینہ نے تیل و گیس پیدا کرنے والے اضلاع کی توسیع اور بحالی کے لئے 3676.842 ملین روپے کی ضمنی گرانٹ جاری کرنے پر اتفاق کیا۔  کے پی نے سینیٹ کے آئندہ انتخابات میں اوپن بیلٹ سے متعلق صدارتی ریفرنس کی حمایت کی

کابینہ نے اساتذہ کی تربیت کے لئے قائم کردہ “PITE اور RITE” کے انضمام کی بھی منظوری دی جو پیشہ ورانہ ترقی کے ایک مکمل ترقیاتی نظامت میں ہے۔ کابینہ نے سوکی کناری ہائیڈل پاور پروجیکٹ کے لئے 884 میگاواٹ کی گنجائش والے 156.11 کنال اضافی اراضی کی فراہمی پر بھی اتفاق کیا ۔ کابینہ نے صوبے میں یکساں نظام تعلیم کو باضابطہ طور پر منظوری دے دی اور وزیراعلیٰ نے نئے نصاب میں پشتو ، ہندکو ، سرائیکی ، گوگاری ، کوہوار اور دیگر جیسی مقامی زبانیں شامل کرنے کی ہدایت کی۔ نیا یکساں نظام سرکاری اور نجی اسکولوں کے نظام میں یکسانیت لائے گا۔

کابینہ نے خیبر پختونخوا بورڈ آف انویسٹمنٹ اینڈ ٹریڈ کے آپریشنل اور مالی قواعد کی بھی منظوری دی۔ کابینہ نے خیبرپختونخوا یوتھ ڈویلپمنٹ کمیشن کے رولز  کی منظوری دی اور کالام ، کمراٹ اور کالاش ڈویلپمنٹ اتھارٹیز کے امور چلانے کے لئے ہر اتھارٹی کو 100 ملین روپے گرانٹ کے اجراء پر اتفاق کیا۔ وزیر اعلی نے ہدایت کی کہ مالم جبہ کے علاقے کو اتھارٹی میں شامل کیا جائے۔


3 تبصرے “خیبر پختونخوا حکومت نے بلدیاتی انتخابات کا اعلان کر دیا

اپنا تبصرہ بھیجیں