پاکستان اور بیلجیئم نے فوجی تعلقات بڑھانے پر اتفاق

بیلجیئم: پاکستان اور بیلجیئم نے ملٹری ٹو ملٹری تعلقات بالخصوص دفاعی پیداوار، تربیت، انسداد دہشت گردی اور انٹیلی جنس کے شعبوں میں مزید بہتر بنانے پر اتفاق کیا ہے۔

اس سلسلے میں ایک معاہدہ چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ اور بیلجیئم کے وزیر دفاع لوڈیوائن ڈیڈونڈر،

چیف آف ڈیفنس ایڈمرل مائیکل ہوفمین اور چیف آف سٹاف آف دی لینڈ کمپوننٹ میجر جنرل پیئر جیرارڈ کے درمیان بیلجیئم میں ہونے والی ملاقات میں طے پایا۔

پاکستان کی مسلح افواج کے میڈیا ونگ انٹر سروسز پبلک ریلیشنز آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف نے کہا کہ پاکستان بیلجیئم کے ساتھ اپنے دوطرفہ تعلقات کو تمام شعبوں میں قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے۔

ملاقاتوں کے دوران باہمی دلچسپی کے دوطرفہ امور اور علاقائی سلامتی کی مجموعی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

اپنے ریمارکس میں بیلجیئم کے معززین نے پاکستان کی مسلح افواج کی پیشہ وارانہ مہارت اور علاقائی امن و استحکام کے لیے اسلام آباد کی مخلصانہ کوششوں کو سراہا۔

انہوں نے پاکستان کے ساتھ تمام شعبوں میں دوطرفہ تعاون بڑھانے کی بھرپور خواہش کا اعادہ کیا۔

18 فروری کو آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ جو کہ بیلجیئم کے سرکاری دورے پر ہیں، نے کہا تھا کہ پاکستان یورپی یونین کے ممالک کے ساتھ اپنے تعلقات کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے اور مشترکہ مفادات کی بنیاد پر باہمی تعاون کو بڑھانے کا تہہ دل سے منتظر ہے۔

آرمی چیف نے یورپین ایکسٹرنل ایکشن سروس کے سیکرٹری جنرل سٹیفانو سنینو اور یورپی یونین ملٹری کمیٹی کے چیئرمین جنرل کلاڈیو گرازیانو سے ملاقات کی۔

آئی ایس پی آر کے مطابق ملاقاتوں میں باہمی دلچسپی کے امور، افغانستان کی موجودہ صورتحال سمیت علاقائی سلامتی کی مجموعی صورتحال اور یورپی یونین کے ساتھ دوطرفہ تعلقات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button