کراچی کے بلدیہ میں تھریڈ فیکٹری میں آگ لگنے سے تین افراد ہلاک

کراچی: (مخلص اخبار تازہ ترین) کراچی کے بلدیہ سیکٹر 5 میں تھریڈ فیکٹری میں آتشزدگی کے نتیجے میں 3 افراد جاں بحق ہوگئے ۔ فائر فائٹنگ ٹیمیں ، چار فائر ٹینڈرز اور سنورکل لفٹ فوری طور پر جائے وقوعہ پر پہنچ گئیں اور آگ پر قابو پالیا۔ تاہم ، آگ لگنے میں چھ گھنٹے لگے اور فیکٹری میں کولنگ کا عمل جاری ہے ۔ ریسکیو آپریشن کے دوران فائر فائٹر بھی زخمی ہوا ، جبکہ ، آگ لگنے سے 3 افراد اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھے۔ ابھی تک آگ کی وجہ معلوم نہیں ہوسکی ہے۔

فائر آفیسر نے میڈیا کو بتایا کہ فیکٹری کی کثیر المنزلہ عمارت میں کوئی ہنگامی دروازہ موجود نہیں تھا ، جبکہ داخلی اور خارجی مقصد کے لئے صرف ایک ہی راستہ موجود تھا۔ تنگ گلیوں کی وجہ سے فائر فائٹرز کو امدادی کام انجام دینے میں انتہائی دشواری کا سامنا کرنا پڑا ۔ جاں بحق افراد کی شناخت محمد کاظم ، فیاض اور شیر علی کے نام سے ہوئی ہے۔ پولیس نے بتایا کہ ابتدائی طور پر آگ عمارت کے زیریں منزل پر لگی جس نے بعد میں پوری عمارت کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔
­­­
مزید پڑھیں: نامعلوم حملہ آوروں کی فائرنگ سے دو افراد ہلاک ہوگئے
گوجرانوالہ: منگل کے روز نامعلوم حملہ آوروں نے ان کے خانے میں گھس جانے اور بے رحمی سے فائرنگ کے بعد کم سے کم دو ٹرانسجینڈر افراد کو ہلاک کردیا ۔ پولیس کے مطابق ، حملہ آور ٹرانسجینڈر کمیونٹی لاجس میں داخل ہوئے اور فائرنگ کی جس کے نتیجے میں ان میں سے دو موقع پر ہی دم توڑ گئے ، تاہم ابھی تک اس ہلاکت کا مقصد معلوم نہیں ہوسکا ہے ۔

نامعلوم حملہ آوروں کی فائرنگ سے دو افراد ہلاک
نامعلوم حملہ آور ٹرانسجینڈرکے خانے میں گھس کر فائرنگ کر کے بے رحمی سے دو افراد کو ہلاک کردیا

پولیس کا کہنا ہے کہ انہوں نے ٹرانسجینڈر متاثرین کے مبینہ قاتلوں کی گرفتاری کے لئے چھاپہ مار کارروائی کے لئے ٹیم تشکیل دی ہے ۔ متعلقہ ڈی ایس پی نے بتایا کہ پولیس ٹیموں کو یہ کام تفویض کیا گیا ہے کہ وہ بے گناہ لوگوں کے مبینہ قاتلوں کی تلاش کر کے  اور ان کو حراست میں لے لیں ۔ ریسکیو ذرائع کے مطابق صوبہ کے پی کے شمالی وزیرستان کے علاقے سے ایک ایمبولینس ایک مریض کو لے کر جارہی تھی جب وہ میران شاہ روڈ پر ڈمپر سے ٹکرا گئی ۔ انہوں نے بتایا ، تصادم میں ایمبولینس کے ڈرائیور سمیت چھ افراد ہلاک ہوگئے۔


متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button